Wednesday, 3 June 2015

"تعلق"

"کسی کے زہر میں بجھے لفظ دیکھ کر"

=======================

اُداس تم ہو ، کسک میرے دل میں ، کیا معنی؟

تمہارا میرا ، تعلق ہے اب بھی کچھ ، یعنی ؟


میں دیکھ سکتا ہوں تہہِ خورشید تم کو جلتے ہوئے

نہ عافیت کا ہی سایہ ، نہ کوئی ابر ہی ہے

 

اسیرِ رنج ہو تم ، اور میں فقط تصویر

محال دست گیری کہ ، حالات کا یہ جبر ہی ہے

 

کرب نارسائی کا بھی ، اور بے بسی ایسی

نہ ایسے میں کوئی چارہ ، سواۓ صبر ہی ہے

 

ثبات دُکھ کو ہمیشہ سے ، اور خوشی فانی

اُداس تم ہو ، کسک میرے دل میں ، کیا معنی؟
 

خُدایا تجھ کو ہی زیبا ہے ، شانِ سلطانی

نہ لا وہ دن ، کہ تیرے لوگ بھی خُدا ہو جائیں

 

جب آئے تِیر صفِ دشمناں سے ، ایسے میں

دیکھنا عزیزو تم ، دوست کیا سے کیا ہو جائیں

 

ہم نشیں ، وقت پر ، رزم گاہِ ہستی میں

کیا گلہ ہے اپنوں کا ، سائے بھی جُدا ہو جائیں

 

ہوا چلے جو مخالف تو امید رکھنا نادانی

اُداس تم ہو ، کسک میرے دل میں ، کیا معنی


اداس تم ہو ، کسک میرے دل میں ، کیا معنی؟

تمہارا میرا ، تعلق ہے اب بھی کچھ ، یعنی

جون 2 ۔2015

No comments:

Post a Comment